سرورق / کھیل / ارجنٹینا کو آخری 16؍ میں پہنچانے کی میسی پر بھاری ذمہ داری گروپ میں ٹاپ مقام کا حصول فرانس کا مقصد۔ ڈنمارک کا آسانی سے شکست کھانا ممکن نہیں –

ارجنٹینا کو آخری 16؍ میں پہنچانے کی میسی پر بھاری ذمہ داری گروپ میں ٹاپ مقام کا حصول فرانس کا مقصد۔ ڈنمارک کا آسانی سے شکست کھانا ممکن نہیں –

ماسکو؍سینٹ پیٹرز برگ، (یو این آئی) فیفا عالمی کپ سے باہر ہونے کے دہانے پر کھڑی ارجنٹینا اپنے ا سٹار فارورڈ اور گریٹسٹ آف آل ٹائم (گوٹ) کہے جا رہے لیونل میسی پر ایک بار پھر اعتماد کر رہی ہے اور اسے امید ہے کہ وہ امیدیں برقرار رکھنے کے لئے منگل کو ’’سوپرایگلز‘‘ نائیجیریا کے خلاف واپسی کر لے گی۔گروپ ڈی کی مضبوط ترین ٹیم اور گذشتہ عالمی کپ کی رنر اپ ارجنٹینا روس میں ایک ڈرا اور ایک شکست کے بعد آخری نمبر پر ہے۔ جبکہ افریقی ٹیم نائیجیریا نے ایک میچ جیتا اور ایک ہار اہے اور3 پوائنٹ کے ساتھ وہ دوسرے نمبر پر ہے اور جنوبی امریکی ٹیم پر جیت اسے ناک آؤٹ میں پہنچا دے گی۔نائیجیریا سے توقع ہے کہ وہ منگل کو پورے اعتماد کے ساتھ سینٹ پیٹرز برگ اسٹیڈیم پر خطرناک ارجنٹینا کا سامنا کرے گی اور میسی کی قیادت میں عالمی کپ جیتنے کا خواب دیکھ رہی ارجنٹینا کو ہرا کر ٹورنامنٹ سے باہر کر دے گی۔اگرچہ دنیا کے عظیم فٹبالر میسی کی ٹیم بھی آخری امید کے لئے کھیل رہی ہے اور واپسی کے لئے پورا زور لگانے کی تیاری میں ہے ۔سوپرایگلز ٹیم نے عالمی کپ میں کروشیا سے0-2 سے شکست کے بعد آئس لینڈ کے خلاف دوسرے میچ میں2-0کی جیت سے زبردست واپسی کی ہے جس سے اس کا حوصلہ بڑھا ہے ۔ نائیجیریا اپنے چھٹے عالمی کپ میں پانچویں مرتبہ ارجنٹینا سے مقابلہ کے لئے تیار ہے اور اس بار اس کا پلڑا یقیناًبھاری ہے ۔افریقی ٹیم کے کوچ گیرنوٹ رور نے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ ہم جیت سکتے ہیں اور ہمیں واپسی کا بھروسہ ہے ۔نائیجیریا نے گذشتہ نومبر کے دوستانہ میچ میں ارجنٹینا کو 4-2سے شکست دی تھی جبکہ اس وقت ٹیم میں میسی نہیں تھے ۔رور نے اوپننگ میچ میں شکست کے بعد سینماز اگھالو اورا یلیکس اووبي کو باہر کر دیا تھا اور امید ہے کہ وہ منگل کو ٹیم میں موسی اور کیلیچي ھیاناچو کے ساتھ ہی اتریں گے ۔ارجنٹینا پر فتح کے ساتھ نائیجیریا دوسرے راؤنڈ میں جگہ پکی کر لے گا۔وہیں گروپ کی دیگر ٹیم آئس لینڈ اگر پہلے ہی ناک آؤٹ میں پہنچ گئی اور کروشیا کو شکست دیتی ہے تو افریقی ٹیم کے لئے ڈرا بھی کافی ہوگا ۔ اگرچہ یہاں گول کا فرق بھی اہم ہوگا ۔ارجنٹینا کے لئے اگرچہ یہ کرو یا مرو کا میچ ہے اور اسے یہ بھی امید کرنی ہوگی کہ آئس لینڈ اپنا میچ نہ جیتے کیونکہ اس صورت میں وہ باہر ہو سکتی ہے۔ساتھ ہی میسی کی ٹیم کو فتح کے ساتھ گول فرق بھی زیادہ رکھنا ہو گا ۔ میسی پر بھلے ہی ان کی ٹیم بہت انحصار کر رہی ہے لیکن گذشتہ دونوں میچوں میں بارسلونا کے فارورڈ نے ہی سب سے زیادہ مایوس کیا ہے اور آئس لینڈ کے خلاف پنالٹی چوکنے کے بعد سے وہ بھاری دباؤ میں ہیں۔ ٓادھر فرانس کی ٹیم فٹ بال عالمی کپ کے اپنے دونوں میچ جیتنے کے بعد ناک آؤٹ میں پہنچ چکی ہے لیکن دوسرے راؤنڈ میں اپنی راہ آسان کرنے کے لئے اس کا مقصد گروپ سی میں سب سے اوپر رہنے کا ہے جس کے لئے منگل کو اسے ڈنمارک کے خلاف بڑی جیت درکار رہے گی۔فرانس نے آسٹریلیا اور پیرو کے خلاف میچ جیتے ہیں اور وہ ناک آؤٹ میں جگہ بنا چکی ہے۔ لیکن آخری 16میں اچھی تال میں کھیل رہی گروپ ڈی کی کروشیا سے بچنے کیلئے اسے اپنے گروپ سی میں سب سے اوپر بنے رہنا ہو گا ۔ فرانس کو گروپ میں سب سے اوپر رہنے کے لئے اگلے میچ میں کم از کم ڈرا کی ضرورت ہے تاکہ وہ گروپ ڈی میں دوسرے نمبر کی ممکنہ ٹیم ارجنٹینا یا نائیجیریا سے مقابلے میں اترے ۔ڈنمارک دوسری طرف گروپ سی میں ناقابل شکست ہے اور اس نے ایک جیت اور ایک ڈرا کھیلا ہے اور4 پوائنٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہے ۔ڈنمارک کے کوچ ایج ہارڈ بھی اپنی ٹیم کی کارکردگی سے کافی پرجوش ہیں اور میچ سے پہلے انہوں نے کہا ہے کہ فرانس میں کچھ خاص نہیں ہے ۔ساتھ ہی پال پوگبا کے ہئیرکٹ کا بھی وہ مذاق بنا کر سرخیوں میں آئے ہیں۔ ڈنمارک کی ٹیم اگر ڈرا بھی کھیلتی ہے تو وہ کوالیفائی کر لے گی لیکن اگر وہ ہارتی ہے اور آسٹریلیا اپنا میچ پیرو سے جیت جاتی ہے تو اسے باہر ہونا پڑ سکتا ہے ۔ڈڈیر ڈیشپ کی ٹیم دوسری طرف ڈنمارک کی بجائے فی الحال کروشیا سے زیادہ گھبرا رہی ہے جسے آخری 7 میچوں میں فرانس نے 6 بار شکست دی ہے ۔پوگبا نے بھی کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ دوسرے دور میں انہیں کروشیا سے نہ کھیلنا پڑے ۔فرانس کے لئے اسٹرائیکر انٹونی گرزمین کا انتخاب ایک مسئلہ ہے جو ایٹلیٹکو میڈرڈ کے ساتھ سیزن کھیلنے کے بعد روس پہنچے ہیں اور اب تک خاص کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کیا ہے ۔امید ہے کہ کوچ پوگبا اور بلیس ماتدی کو بینچ پر بیٹھا سکتے ہیں جنہیں افتتاحی میچ میں زرد کارڈ ملے ہیں۔وہیں ڈنمارک کے ولیم کویسٹ پیرو کے خلاف زخمی ہونے کے بعد میڈیکل جانچ کے بعد روس واپس پہنچ رہے ہیں لیکن ان کے کھیلنے پر شک بنا ہوا ہے ۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

وزیر کھیل راٹھور سے ملے لکشے سین –

نئی دہلی، جونیئر ایشیائی بیڈمنٹن چمپئن شپ میں 53 سال کے طویل وقفے کے بعد …

جواب دیں

%d bloggers like this: