سرورق / کھیل / آئی پی ایل: ممبئی کو ڈیتھ اووروں میں ‘ڈیتھ’ سے بچنا ہوگا، میچ کل –

آئی پی ایل: ممبئی کو ڈیتھ اووروں میں ‘ڈیتھ’ سے بچنا ہوگا، میچ کل –

ممبئی، روہت شرما کی قیادت والی اسٹار کھلاڑیوں سے لیس ممبئی انڈینس آئی پی ایل 11 میں مسلسل فتح کے قریب آکر ڈیتھ اووروں میں لڑکھڑاہٹ کی وجہ سے میچ گنوا رہی ہے اور منگل کو سنرائزرس حیدرآباد کے خلاف اپنے گھریلو میچ میں اسے انہی غلطیوں کا حل ڈھونڈنا ہوگا۔
دو بار کی چمپئن ممبئی نے اب تک اپنے پانچ میچوں میں ایک ہی جیتا ہے اور وہ صرف دو پوائنٹس لے کر آٹھ ٹیموں میں ساتویں نمبر پر کھسک گئی ہے۔گزشتہ میچ میں ممبئی کو راجستھان رائلس کے ہاتھوں تین وکٹ سے شکست کھانی پڑی تھی۔وہیں حیدرآباد کی ٹیم بھی اتار چڑھاو سے گزر رہی ہے۔اسے بھی گزشتہ میچ میں سخت جدوجہد کے باوجود چنئی سپر کنگ سے چار رنز سے قریبی شکست ملی تھی۔وہ فی الحال ٹیبل میں پانچ میچوں میں تین جیت اور دو شکست کے بعد چھ پوائنٹس کے ساتھ چوتھے نمبر پر ہے۔
ٹورنامنٹ میں ممبئی نے اپنے گھریلو میدان پر چنئی سے اوپنگ میچ ایک وکٹ سے ہارا تھا۔اس کے بعد وہ حیدرآباد سے حیدرآباد میں میچ آخری گیند پر ایک وکٹ سے گنوایا۔ممبئی کو دہلی سے آخری گیند پر سات وکٹ سے شکست کھانی پڑی۔ممبئی کو راجستھان کے خلاف اپنا پچھلا میچ دو گیند باقی رہتے تین وکٹ سے گنوانا پڑا۔
ممبئی کے کپتان روہت نے اعتراف کیا ہے کہ ٹیم کو ڈیتھ اوورو میں لڑکھڑانے کی عادت سے نکلنا ہو گا ۔ روہت کا کہنا ہے کہ جو میچ جیتے جا سکتے تھے وہ ان کی ٹیم نے آخری اوور میں گنوا دیے۔
ممبئی نے راجستھان کے خلاف گزشتہ میچ میں خراب بلے بازی کی اور پھر اس کے بولر بھی کافی مہنگے رہے۔ممبئی کے تین بلے باز سوريہ كمار یادو 72 رن، اشان کشن 58 رن اور کیرون پولارڈ ناٹ آؤٹ 21 رنز کی اننگز کے علاوہ اور کوئی کھلاڑی دہائی کے ہندسے تک بھی نہیں پہنچ سکا۔
تسلسل کے فقدان میں روہت نے مڈل آرڈر میں خود کو اتارا اور وہ گرتے وکٹوں کے درمیان اپنی ذمہ داری نہیں نبھا سکے اور صفر پر آؤٹ ہوئے۔روہت نے اب تک پانچ میچوں میں صرف ایک نصف سنچری بنائی ہے باقی چار اننگز میں ان کے 15، 11، 18 اور صفر کے اسکور کر رہے ہیں جو ایک کپتان کے لحاظ سے قطعی مثالی نہیں کہے جا سکتے۔روہت کو اپنی کارکردگی میں تسلسل لانا ہوگا تبھی وہ ساتھی کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی کر پائیں گے۔
روہت کے علاوہ مشیل میك كلینگن اور ایون لیوس بھی صفر پر آؤٹ ہوئے۔وہیں بولروں میں مستفیض الرحمن، كرنال پانڈیا اور میك كلینگن نے وکٹ تو نکالے لیکن آٹھ تا 10 سے اوپر کے اكونومي ریٹ سے رنز لٹايے اور کافی مہنگے ثابت ہوئے جبکہ یہ بولر سوجھ بوجھ سے 168 رن کے تسلی بخش اسکور کا دفاع کر سکتے تھے۔
دوسری طرف حیدرآباد نے پچھلا میچ چنئی سے کافی قریب چار رنز سے ہارا تھا۔کین ولیم کی کپتانی والی ٹیم ٹریک پر واپسی کرنے کے لئے ممبئی کے خلاف پورا زور لگايےگي جو فی الحال خراب دور سے گزر رہی ہے اور صرف ایک ہی میچ جیت سکی ہے۔چنئی کے خلاف ایک وقت 71 رن پر چار وکٹ گنوانے کے بعد کپتان کین کی 84 رنز کی اننگز نے ایک وقت میچ کو پلٹ کر رکھ دیا تھا۔
اسٹار کھلاڑی شکھر دھون کی چوٹ اور ان کے کھیلنے پر بنے ہوئے شک کی وجہ سے بھی ولیمسن پر رن بنانے کی اضافی ذمہ داری آ گئی ہے۔ٹیم کے پاس ہڈا، منیش پانڈے، دھماکہ خیز بلے باز یوسف پٹھان جیسے اچھے کھلاڑی ہیں جنہوں نے رنز بنائے ہیں۔اگرچہ ٹیم کا گیند بازی آرڈر اس کی بیٹنگ سے زیادہ مضبوط ہے لیکن گزشتہ میچ میں بولر فلاپ رہے تھے اور مہنگے ثابت ہوئے۔
فاسٹ بولر بھونیشور کمار، لیگ اسپنر راشد خان، سدھارتھ کول اور آل راؤنڈر شکیب الحسن اس کے بہترین بولر ہیں جنہیں ممبئی کے خلاف کفایتی بولنگ کرنی ہوگی۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

وزیر کھیل راٹھور سے ملے لکشے سین –

نئی دہلی، جونیئر ایشیائی بیڈمنٹن چمپئن شپ میں 53 سال کے طویل وقفے کے بعد …

جواب دیں

%d bloggers like this: